آرمی چيف پر تنقيد سے فوج ميں غم و غصہ پايا جاتا ہے، وزیراعظم عمران خان.

وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ آرمی چيف پر تنقيد سے فوج ميں غم و غصہ پايا جاتا ہے۔.

نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ جنرل باجوہ جمہوريت پر يقين رکھتے ہيں کوئی اور آرمی چيف ہوتا تو فوری ردعمل آتا۔
انٹرویو میں وزیر اعظم کا یہ بھی کہنا تھا کہ اگر اپوزیشن استعفے دے گی تو اس سے ملک کی بہتری ہوگی۔
وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ جنرل باجوہ برداشت کر رہے ہیں کیونکہ وہ جمہوريت پر يقين رکھتے ہيں، اپوزیشن فوج پر دباؤ ڈال رہی ہے تاکہ وہ جمہوری حکومت کو گرا دیں، اس بات پر تو آرٹیکل چھ لگتا ہے غداری کا کیس بنتا ہے۔
وزیراعظم کا کہنا تھا کہ دعا کر رہا ہوں ،انتظار کر رہا ہوں اپوزیشن استعفے دے یہ ملک کے لیے اچھا ہوگا، اگر اپوزیشن ایک ہفتے تک دھرنا دے کر بیٹھ جائے تو استعفی دینے کا سوچوں گا

وزیراعظم نے کہا کہ غصہ تو بہت ہے مگر جنرل باجوہ برداشت کررہےہیں، ملک میں سول اور ملٹری کے زبردست تعلقات ہیں، نوازشریف نےایسی اداکاری کی کہ ہالی وڈ میں ہوتاتو آسکرمل جاتا۔
عمران خان نے کہا کہ پی ڈی ایم جو کرناچاہتی ہے ہر چیز کیلئے تیار ہوں،مینار پاکستان جلسے سے ان کو نقصان ہوا، میں جلسوں کا اسپیشلسٹ ہوں، یہ فلاپ شو تھا، میں نےدیکھانہیں مگرلاہورکےلوگ جلسے میں نہیں گئے۔
وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ انہوں نے استعفےدیےتوپاکستان کی بہتری ہوگی، زرداری نےدبئی کے50اورنوازشریف نے21غیرملکی دورےکیے، ملک مقروض ہورہاتھااور یہ غیرملکی دورے کررہےتھے، ان کو دعوت دیتا ہوں کل نہیں آج استعفے دیں۔

’اسلام آباد مارچ کیلئے میں ان کی مدد بھی کروں گا‘

وزیراعظم نے کہا کہ ان کے پارٹی رہنما استعفے نہیں دیں گے، اسلام آباد مارچ کیلئے میں ان کی مدد بھی کروں گا، میری ساری مددکےباوجودبھی یہ یہاں ایک ہفتہ نہیں گزارسکیں گے۔
انہوں نے کہا کہ سینیٹ الیکشن ایک ماہ پہلےبھی کرسکتےہیں،ہم کیوں نہ کریں،شوآف ہینڈز کا مطلب اوپن بیلٹ ہوتا ہے، سینیٹ الیکشن میں پیسہ چلتا ہے، اسی پر ہم نے اپنے ارکان نکالے، میں نے پہلے بھی کہا تھا کہ پیسہ خرچ کرکے ممبر بنیں یہ کیسی جمہوریت ہے۔
عمران خان نے کہا کہ بہتر ہے اوپن بیلٹ ہو، اس سےکرپشن ختم ہوگی،میرٹ پر سینیٹر آئیں گے تو اسمبلی میں اپنا حصہ ڈالیں گے۔
انہوں نے کہا کہ اٹارنی جنرل کا خیال ہے کہ اوپن بیلٹ ہوسکتا ہے، اس پر ہم سپریم کورٹ سے وضاحت لیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں