ن لیگ والے فوج کے خلاف جلسے کر رہے ہیں اور فوج ہماری حفاظت کے لیے صرف پچھلے 5 دنوں میں اب تک 22 شہادتیں دے چکی ہے۔

فضل الرحمان نے اعلان کیا ہے کہ پی ڈی ایم کا نشانہ اسٹیبلشمنٹ یعنی فوج ہے یہی کچھ پاکستانی عدالتوں کے مفرور اشتہاری نے بھی اپنی ویڈیو تقریروں میں کہا ہے

65 کی جنگ کے لمحات سوچیے کیا جذبہ تھا کیا شوق شہادت تھا ایوب خان نے ریڈیو پاکستان پر قوم سے خطاب کرتے ہوے کہا تھا آج صبح سویرے ہندوستانی فوج نے پاکستان کے علاقے پر لاہور کی طرف سے حملہ کیا ہے میرے عزیز ہم وطنو جنگ شروع ہو چکی ہے آگے بڑھو اور دشمن کا مقابلہ کرو خیر مقابلہ بھی ہوا دشمن بھاگا اپنے علاقے بھی دے بیٹھا کیوں کے جنگیں قومیں لڑا کرتی ہیں جنگیں جذبوں سے جیتی جاتی ہیں ہتھیاروں سے نہیں ہم نے پتھروں سے لڑائی کی اور بھارت کا غرور خاک میں ملا دیا

تو حالات کچھ اب بھی ویسے ھی ہو چکے ہیں کچھ جنگیں ایسی ہوتی ہیں جن میں آپ کا دشمن سامنے ہوتا ہے مگر ہائبرڈ وار ایسی جنگ ہے جس میں دشمن آپ کے ذہن پر سوار رہتا ہے اور آپ جان ھی نہیں پاتے کے وه دراصل سہونی صلیبی دجالی طاقتوں کے ہاتھ کا کھلونا بنا ہوا ایک کٹ پتلی سیاستدان یا مذہبی لباس میں چھپا اسلام اور پاکستان کا دشمن آپ کے ذہن کے ساتھ کھیل رہا ہوتا ہے

حالیہ دنو میں نواز زرداری اور فضل الرحمن نے صرف علان نہیں کیا بلکے باقاعدہ پاک فوج کے خلاف جنگ شروع کر دی ہے جس کے نتجے میں پچھلے چند دنوں میں ہم نے 22 جوانوں کی شہادتیں دیکھی یاد رہے فضل الرحمن نے کہا تھا ہم تمہارا حال امریکا جیسا کریں گے جیسا افغانستان میں امریکا کے ساتھ ہوا ویسا تمہارے ساتھ کریں گے

پی ڈی ایم ہے کیا
پی ٹی ایم
بی ایل اے
نون لیگ
جے یو آئی
پی پی پی
ٹی ٹی پی
بھارت
یہ سب اس وقت ایک پیج پر ہیں اور وطن عزیز پر چارو طرف سے حملہ آور ہوے ہیں اس مشکل حالات میں اپنی افواج کا بھرپور ساتھ دیں ان چوروں لٹیروں کے خلاف احتجاج بھی کریں اپنی افواج کی طرف اٹھنے والی ہر ناپاک انگلی کو کاٹنا آپ کی ذمہ داری ہے یہ فوج آپ کے لیے جانیں دے رہی ہے فوج ہے تو پاکستان ہے پاکستان ہے تو ہم ہیں

پاک آرمی زندہ باد
پاکستان پائندہ باد

سینئرجرنلسٹ جان ایم رمضان جانباز

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں