چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے پاک فوج میں کب شمولیت اختیار کی۔

24 اکتوبر 1980
پاکستان🇵🇰 کے موجودہ چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے پاک فوج میں شمولیت اختیار کی تھی۔

جنرل قمر جاوید باجوہ❤ 11 نومبر 1960 کو کراچی میں پیدا ہوئے۔جنرل باجوہ کے والد لیفٹیننٹ کرنل محمد اقبال باجوہ کا انتقال 5 جون 1967 میں دوران سروس کوئٹہ میں ہوا جب کہ والدہ کا انتقال ستمبر 2013 میں ہوا۔جنرل باجوہ کے سسر میجر جنرل اعجاز امجد کا تعلق بھی پاکستان آرمی سے یے۔ان کی اہلیہ کا نام عائشہ ہے جب کے دو بیٹے ہیں ۔سعد اور علی۔

جنرل باجوہ کے خاندان کا تعلق گکھڑ منڈیم گوجرانوالہ ہے ہے۔ انہوں نے کینیڈین آرمی کمانڈ اینڈ سٹاف کالج، نیول پوسٹ گریجوایٹ اسکول اور نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی، پاکستان سے تعلیم حاصل کی۔

جنرل قمر جاوید باجوہ نے فوجی کیریر کا آغاز 16 بلوچ ریجمنٹ میں 24 اکتوبر 1980ء کمیشن حاصل کر کے کیا تھا۔یہ وہ ہی یونٹ یے جس میں ان کے والد نے بھی کمیشن حاصل کیا تھا۔۔وہ کینیڈا اورامریکا کے دفاعی کالج اور یونیورسٹیوں سے پڑھ چکے ہیں۔ وہ کوئٹہ میں انفرینٹری اسکول میں انسٹریکٹر کے طور پر فراض سرانجام دے چکے ہیں۔ وہ کانگو میں اقوام متحدہ کی امن فوج کی کمانڈ سنبھال چکے ہیں۔🇵🇰

وہ راولپنڈی کی انتہائی اہم سمجھی جانے والی کور دہم کو 14 اگست 2013 سے 22 ستمبر 2015 تک کمانڈ کرچکے ہیں۔

29 نومبر 2016 کو قمر جاوید باجوہ نے پاک آرمی کی کمان سنبھالی۔قمر جاوید باجوہ پاکستان آرمی کے 16 ویں سربراہ ہیں ۔نئی تعیناتی سے قبل وہ انسپکٹر جنرل تھے۔ جی ایچ کیو میں جنرل ٹریننگ اور ایولیوشین کے۔ 🇵🇰

جنرل قمر جاوید باجوہ نے 2016 میں اُن تربیتی مشقوں کی خود نگرانی کی جو لائن آف کنٹرول کے اطراف کشیدگی کی وجہ سے کی جا رہی تھیں۔ اِن مشقوں کا معائنہ سبکدوش ہونے والے آرمی چیف جنرل راحیل نے خود کیا تھا۔

جنرل قمر جاوید باجوہ کی کمان میں فروری 2017 میں آپریشن رد الفساد اور جولائی 2017 میں آپریشن خیبر 4 کا آغاز ہوا ۔🇵🇰🇵🇰

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں